تقلید اور اہل تقلید

کارتوس خان نے 'غیر اسلامی افکار و نظریات' میں ‏ستمبر 2, 2007 کو نیا موضوع شروع کیا

موضوع کی کیفیت:
مزید جوابات کے لیے کھلا نہیں۔
  1. کارتوس خان

    کارتوس خان محسن

    شمولیت:
    ‏جون 2, 2007
    پیغامات:
    933
    بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
    تقلید اور اہل تقلید

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ۔۔۔وبعد!۔

    کسی غیر نبی کی بے دلیل وبلا حجت بات آنکھیں بند کر کے، بے سوچے سمجھے تسلیم کرنا تقلید کہلاتا ہے جناب اشرف علی تھانوی دیوبندی کہتے ہیں۔۔۔

    اکثر مقلدین عوام بلکہ خواص اس قدر جامد ہوتے ہیں کہ اگر قوم مجتہد کے خلاف کوئی آیت یا حدیث کان میں پڑتی ہے اُن کے قلب میں انشراح و انبساط رہتا بلکہ اول استنکار قلب میں پیدا ہوتا ہے پھر تاویل کی فکر ہوتی ہے خواہ کتنی ہی بعید ہو اور خواہ دوسرے دلیل قوی اُس کے معارض ہو بلکہ مجتہد کی دلیل اس مسئلے میں بجز قیاس کے کچھ بھی نہ ہو خود اپنے دل میں اُس تاویل کے وقعت نہ ہو مگر نصرت مذہب کے لئے تاویل ضروری سمجھتے ہیں دل یہ نہیں مانتا کہ قول مجتہد کو چھوڑ کر حدیث صحیح صریح پر عمل کر لیں بعض سنن مختلف فیہا مثلا آمین بالجہر وغیرہ پر حرب وضرب کی نوبت آجاتی ہے اور قرون ثلثہ میں اس کا شیوع بھی نہ ہوا تھا بلکہ کیف ما اتفق جس سے چاہا مسئلہ دریافت کر لیا اگرچہ اس امر پر اجماع نقل کیا گیا ہے کہ مذاہب اربعہ کو چھوڑ کر مذہب خامس مستحدث کرنا جائز نہیں یعنی جو مسئلہ چاروں مذہبوں کے خلاف ہو اُس پر عمل جائز نہیں کہ حب داتر و منحصران چار میں ہے مگر اس پر بھی کوئی دلیل نہیں کیونکہ اہل ظاہر ہر زمانہ میں رہے اور یہ بھی نہیں کہ سب اہل ہوا ہی ہوں وہ اس اتفاق سے علیحدہ رہے دوسرے اگر اجماع ثابت ہوجاوے مگر تقلید شخصی پر تو کبھی اجماع بھی نہیں ہوا۔ (تذکرہ الرشید جلد ١ صفحہ ١٣١)۔۔۔

    بعض مقلدین نے اپنے آئمہ کو معصوم عن الخطاء و مصیب وجوبا و مفروض الاطاعت تصور کر کے عزم بالجزم کیا کہ خواہ کیسی ہی حدیث صحیح مخالف قول امام صاحب کے ہو اور مستند قول امام کا بجز قیاس کے امر دیگر نہ ہو پھر بھی بہت سے علیل و خلیل حدیث میں پیدا کر کے یا اس کی تاویل بعید کر کے حدیث کو رد کر دیں گے اور قول امام کو نہ چھوڑیں گے ایسی تقلید حرام اور مصداق قولہ تعالٰی [ اتخذوا احبارھم ورھبانھم اربابا من دون اللہ] الآیۃ اور خلاف وصیت آئمہ مرحومین کے ہے الخ ( امداد الفتاوی جلد ٥ صفحہ ٢٩٧)۔۔۔

    عرض یہ ہے کہ ایسی تقلید کو چھوڑ کر کتاب و سنت کی اتباع کا راستہ اختیار کرنا چاہئے۔وسلام۔۔۔
     
Loading...
موضوع کی کیفیت:
مزید جوابات کے لیے کھلا نہیں۔

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں