کیا اس حدیث سے ثابت ہے کہ کم مقدار سونے پر بھی ذکواۃ لازم ہے

خان نے 'آپ کے سوال / ہمارے جواب' میں ‏مارچ 22, 2012 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. خان

    خان ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏جنوری 27, 2011
    پیغامات:
    391
    "ایک عورت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی خدمت میں حاضر ہوئی ، اس کے ہمراہ اس کی بیٹی بھی تھی جس کے ہاتھ میں سونے کے دو کنگن تھے۔ آپ نے اس سے دریافت کیا کیا تو اس کی زکوٰہ دیتی ہے؟ اس نے عرض کیا نہیں، آپ نے فرمایا: "کیا تجھے یہ پسند ہے کہ قیامت کے دن اللہ تعالیٰ ان کے بدلے تمھیں آگ کے دو کنگن پہنائے،" یہ سن کر اس خاتون نے دونوں کنگن پھینک دیے۔ [ابو داود، الزکوٰۃ:1563"

    کیا اس حدیث سے یہ بات ثابت ہوتی ہے کہ اگر سونا کنگن یا انگوٹھی وغیرہ کی شکل میں ہو تو ساڑھے سات تولہ سے کم پر بھی ذکواۃ لازم ہے ، ؟؟؟؟

    اور اگر سونا ڈلی کی شکل میں ہوتو پھر ساڑھے سات تولہ ہونا ضروری ہے ؟

    اور اگر یہ حدیث اس بات پر دلالت نہیں کرتی تو اس حدیث کا کیا مطلب ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم اس کنگن پر ذکواۃ دینے کا کہا ؟
    کیا وہ ساڑھے سات تولہ سے ذائد تھے ؟
    دلیل ؟

    براہ کرم اصلاح فرمائیں۔

     
  2. رفیق طاھر

    رفیق طاھر علمی نگران

    رکن انتظامیہ

    ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏جولائی 20, 2008
    پیغامات:
    7,938
    یہ روایت ساڑھے سات تولہ سونا سے کم پر زکاۃ کے وجوب کو ثابت نہیں کرتی ۔
    نصاب زکاۃ والی روایات کو سامنے رکھا جائے تو نتیجہ یہی نکلتا ہے کہ
    یا تو وہ نصاب سے زائد تھے
    یا پھر زکاۃ نکالنے میں انہیں شامل کرنا مقصود تھا ۔
    واللہ تعالى أعلم
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں