قتلِ انساں ہے کہ نہیں تھمتا

عائشہ نے 'شعری مجلس' میں ‏جنوری 12, 2013 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    رقص وحشت ہنوز طاری ہے
    ہر گلی خوں کی ملمع کاری ہے

    سنگ کوئی گراؤ شیشے پر
    زندگی پر جمود طاری ہے

    بانٹ لیں آؤ درد کے لمحے
    ساتھیو وقت غمگساری ہے

    یوں تو اجڑی ہے بارہا دھرتی
    مگر اب کے یہ ضرب کاری ہے

    بڑے دن سے اداس ہے طبیعت
    شاید اندر بھی جنگ جاری ہے

    قتلِ انساں ہے کہ نہیں تھمتا
    رقصِ ابلیس ہے کہ جاری ہے

    چین پل بھر سحر نہیں آتا
    کیا کہوں کیسی بے قراری ہے

    شائستہ سحر ​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  2. Ishauq

    Ishauq -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏فروری 2, 2012
    پیغامات:
    9,612
    عمدہ انتخاب ھے
     
  3. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,398
    موجودہ حالات کے تناظر میں عمدہ انتخاب!

    شیئرنگ کا شکریہ!
     
  4. ام ثوبان

    ام ثوبان رحمہا اللہ

    شمولیت:
    ‏فروری 14, 2012
    پیغامات:
    6,690
    بہترین شئیرنگ
    جزاک اللہ خیرا
     
  5. رفی

    رفی -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 8, 2007
    پیغامات:
    12,398
    جذبہ ء65 و زلزلہء اکتوبر ابھی باقی ہے
    یہ پرائی آگ کی چٹختی چنگاری ہے​
     
  6. Bilal-Madni

    Bilal-Madni -: منفرد :-

    شمولیت:
    ‏جولائی 14, 2010
    پیغامات:
    2,469
    شیئرنگ کا شکریہ!
     
  7. ساجد تاج

    ساجد تاج -: رکن مکتبہ اسلامیہ :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 24, 2008
    پیغامات:
    38,756
    جزاک اللہ خیرا
    شیئرنگ کا شکریہ سسٹر
     
  8. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    یا اللہ رحم
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں