چار انگشت r4iba کا نشان

اسامہ طفیل نے 'اركان مجلس كے مضامين' میں ‏اگست 27, 2013 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. اسامہ طفیل

    اسامہ طفیل نوآموز

    شمولیت:
    ‏اگست 5, 2013
    پیغامات:
    198
    اسلام علیکم!
    یہاں رابعہ کے بارے میں ایک پوسٹ دیکھی اس پوسٹ میں جواب کا مجاز نہ تھا اس لیے الگ تھڑیڈ بنایا اور کوشش کی جتنی مجھے معلومات ہے یہاں پیش کردو.ذاتی تور پر مجھے اس نشان سے کوئی دلچسپی نہیں .
    یہاں میں اس تصویر کا تذکرہ بھی کرنا چاہوں گا جو جناب رفیق طاہر صاحب نے فیس بک سے پیش کی میرے خیال میں وہ دلیل ناکافی ہے کیونکہ فیس بک اور انٹرنیٹ کی دنیا میں دجال کے مطلق اس طرح کی تصاویر کی مربھار ہے کبھی دجال کی نشانیاں امریکی ڈالر پر نشان لگاکر واضح کی جاتی ہے اور ثابت کیا جاتا ہے امریکا دجال ہے کبھی کسی معذور پجے کی تصویر کو دجال قرار دیا جاتا ہے کبھی دجال کا رشتہ اسرائیل سے جوڑا جاتا ہے کبھی مصری فرعونوں کے مقبروں اہرام سے..

    ہر طرح کے نشان ہر زمانہ میں کسی نہ کسی جگہ استعمال ہوتے رہے ہے کبھی مذہبی تور پر کبھی کسی یاد گار،جگہ،سانحہ،حکومت بادشاہی،پر جو خاص نشان تھے اسلام میں اس کا ذکر موجود ہے جیسے صلیب اور ان کا استعمال بھی ممنوع ہے(یہ میرا ماننا ہے اس میں اختلاف بھی ہو سکتا ہے)
    رابعہ

    الاخوان المسلون نے اپنے آفشل اردو صحفے جس کو وہ کچھ پاکستانیوں کی مدد سے اردو میں چلاتے ہے فیس بک پر رابعہ کے مطلق کافی کچھ لکھا ہے،کوئی بھی ان کے صفحہ پر دیکھ سکتا ہے،اجہاں تک انہوں نے تعریف کی تو اس کو اسلام یا خلافت سے نہیں جوڑا اور لکھا یہ فتح کا نشان ہے اور اظہار یکجہتی کا طریقہ اور رابعہ اس لے کے یہ ان مقامات سے منسوب ہے جن کے ناموں میں رابعہ تھا


    (تفصیل آگے) اور جہاں ہزاروں مسلمانوں کا خون بہایا گیا یہ ان لوگوں کی یاد میں ہے وغیرہ وغیرہ .:
    ‏‎
    العربیہ کی صحافی ایمان الشناوی نے "چار انگشت کا سلیوٹ: ''رابعہ ہاتھ'' کی سوشل میڈیا تشہیر" کے عنوان سے مضمون لکھا ہے وہ لکھتیں ہیں:
    رابعہ کے نشان کی چند ہی گھنٹے میں تشہیر ہوگئی تھی۔ اس کی تخلیق سب سے پہلے کہاں ہوئی ہے، اس حوالے سے صورت حال ابھی واضح نہیں ہے۔ تاہم ترکی سے تعلق رکھنے والے فوجی انقلاب مخالف کارکنان نے رابعہ ڈاٹ کام [R4bia.com] کے نام سے ایک ویب سائٹ بھی بنا دی گئی ہے۔ اس پر عربی، انگریزی اور ترک زبانوں میں اس سوال کا جواب دینے کی کوشش کی گئی ہے کہ رابعہ کیا ہے؟
    رابعہ آزادی کی علامت ہے۔
    رابعہ آزادی اور انصاف کی نئی تحریک کا نام ہے۔
    رابعہ نئی دنیا کی پیدائش ہے۔
    رابعہ دنیا کے منظرنامے پر مسلمانوں کی واپسی کا نام ہے۔
    رابعہ کا مطلب انصاف ،آزادی اور ضمیر ہے۔
    رابعہ وہ جگہ ہے جہاں مغرب کی نام نہاد اقدار کا دھڑن تختہ ہوگیا۔
    رابعہ کا مطلب مصری ہیروز ہیں جو مر کر آزاد ہوگئے۔
    رابعہ ان لوگوں کا نام ہے جنھوں نے اپنی شہادت سے پوری اسلامی دنیا کو جگا دیا۔
    رابعہ وہ جگہ ہے جہاں لوگوں نے اپنی موت کو حیات جاوید بنا دیا ہے۔
    رابعہ ہمارے بچوں کا نیا نام ہے جو دنیا کو تبدیل کریں گے۔
    رابعہ انسانیت کی نئی سانس ہے۔
    رابعہ خوفناک مغربی اقدار کے خلاف ہر کسی کے لیے انصاف کا نام ہے۔
    رابعہ اسلامی دنیا کا اتحاد ہے۔
    رابعہ ہماری بیٹی اسماء ہے۔
    یہاں ہماری دختر اسماء سے مراد اسماء البالتاجی ہیں، جو اخوان المسلمون کے سنئیر رہ نما محمد البالتاجی کی صاحبزادی تھیں۔ وہ رابعہ اسکوائر میں سکیورٹی فورسز کی کارروائی کے دوران جاں بحق ہوگئی تھیں۔
    اس ویب سائٹ کی انتظامی ٹیم سے تعلق رکھنے والے ایک ذریعے نے "العربیہ" کو بتایا کہ رابعہ ڈاٹ کام کا کوئی ایک مالک نہیں ہے۔ اس کے مالکان شیعہ اور سنی ہیں جو شام، عراق ،میانمر، غزہ اور دنیا کے دوسرے حصوں میں مارے جا رہے ہیں۔
    درایں اثناء ترک وزیراعظم رجب طیب ایردوآن نے رابعہ کی علامت کے بارے میں بلند توقعات کا اظہار کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ روایتی ''وی'' کے نشان کی جگہ لے گا اور یہ فتح اور یک جہتی کا نمائندہ ہے۔
    ''رابعہ'' کے مقابلے میں پنجہ
    چار انگشتوں والے رابعہ کے نشان کے مقابلے میں مصر کی مسلح افواج کے سربراہ جنرل عبدالفتاح السیسی کے حامیوں نے ان کے حق میں پانچ انگلیوں پر مشتمل پنجے کے نشان کی تشہیر شروع کر رکھی ہے۔ اس کو مصر کا روایتی نشان سمجھا جاتا ہے اور اس سے مراد برائی یا نحوست کو دور کرنا ہے۔
    سوشل میڈیا کی بہت سی ویب سائٹس پر ہاتھ کی تصویر کے نیچے جنرل سیسی کے حق میں بیان درج کیا گیا ہے۔ فوج کی حمایت میں دونوں بازوؤں سے ''او کے'' کے نشان کی بھی تشہیر کی جارہی ہے۔ تاہم اس میں انگلیوں کو موڑ کر ''سی'' کی شکل دے دی گئی ہے۔ اس طرح دو ''سی ،سی'' بن گئے ہیں جن سے مراد جنرل سیسی ہیں۔

    بےشک سب مسلمانوں کو یاد رکھنا چاہیے پر جو خیالات ذہن میں آتے ہے ان کا ازالہ بھی مناسب ہے اور اویس سلفی صاحب نے اچھا سوال کیا اور نوجوانوں کے ذہن میں آنے والا سوال پوچھا کیونکہ یہ مسلمانیوں میں بہت مقبول ہو راہا ہے علماء کو اس کی شرعی حثیت بھی واضع کرنی چاہے۔
    محترمہ ام نور العين صاحبہ نے بہت صحیح لکھا میرے خیال میں وہ اس نشان کی چند الفاظ میں مکمل تشریح ہے جو اس نشان کی حیثت اور مقاصد واضع کرتی ہے
    یہ نشان ایک خاص سیاسی موقف کی حمایت کے لیے استعمال ہو رہا ہے جب کہ استعمال کرنے والوں میں سے بیشتر کو ان سیاسی حالات کی تفاصیل کا علم نہیں
     
  2. انور علی

    انور علی -: محسن :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 29, 2011
    پیغامات:
    144
    میں اس نشان سے بہت اختلاف کرتا ہوں کیونکہ یہ صرف مصر یعنی فرعونیوں کے لئے بنایا گیا ہے۔۔

    باقی دنیا کا کیا،؟؟

    سب لوگ کہتے ہے یہ نشان رجب طیب اردگان نے سامنے لایا ہے اور بنایا بھی ترکی نے ہے۔۔

    تو کیا ترکی مسلمان ملک ہے نہیں تو ترکی تو ایک سیکولر ملک ہے جہاں کوئی بھی مزہب نہیں شراب حلال ہے ترکی کا ایک چینل گورنمنٹ چینل عریاں بھی ہے،

    بیلی ڈانس کا قومی ڈانس ہے،
    تو کیا ہم لوگ ان کے پیچھے جائے جن کا ملک خود لا دین ہے؟؟؟

    بھائی پہلے اپنے ملک کو تو اسلام بناو پھر جا کر مسلمانوں کے لئے کوئی نشان کا انتخاب کرنا۔۔

    شکریہ۔۔
     
  3. اسامہ طفیل

    اسامہ طفیل نوآموز

    شمولیت:
    ‏اگست 5, 2013
    پیغامات:
    198
    محترم مجھے نہیں معلوم آپ کس سے مخاطب ہیں کیونکہ پوسٹ میں تو کسی کو نشان اختیار کرنے کی دعوت نہیں دی گئی غیر جانبدرانہ تور پر تھوڑی معلومات دی گئی ہیں اور پوسٹ کا اختام پڑھیں آپ کو میرا نظریہ معلوم ہوجائے گا اور دنیا کے تمام مسلمان بھائی بھائی ہے صرف اپنے ملک کے نہیں
     
  4. اسامہ طفیل

    اسامہ طفیل نوآموز

    شمولیت:
    ‏اگست 5, 2013
    پیغامات:
    198
    مصری بھی مسلمان ہے ان کو فرعونیوں کے لقب سے پکارنا ایک ذمہ دار کو ذیب نہیں دیتا
     
  5. اسامہ طفیل

    اسامہ طفیل نوآموز

    شمولیت:
    ‏اگست 5, 2013
    پیغامات:
    198
    اور میرے بھائی شراب تو ہر مسلم ملک میں پی جاتی ہے ہرطرح کا ناچ گانا بھی ہوتا ہے بند کمروں میں ہر کام ہوتا ہے بیلی ڈانس تو امارات میں بھی بہت مقبول ہے خفیہ بار بھی ہیں پر جس طرح ہر کوئی پسند نہیں کرتا ترکی میں بھی ایسے مسلم موجود ہے سب کو مورد الزام نہیں ٹھرایا جاسکتا اور پوسٹ کا تو لب لباب ہی یہی ہے اس نشان کا اسلام سے کوئی لینا نہیں صرف اپنے مقاصد کیلے استعمال کیا جاتا ہے لگتا ہے نشان سے ناپسندگی کے سبب آپ نے پوسٹ پڑھی ہی نہیں صرف نظر ڈالی ہے اور کومینٹ کردیا
     
  6. انور علی

    انور علی -: محسن :-

    شمولیت:
    ‏نومبر 29, 2011
    پیغامات:
    144
    ارے نہیں اسامہ بھائی پڑھی ہے پوری پوسٹ،
    لیکن یہ تو میری ذاتی رائے ہے۔۔

    کئی کو سمجھا کے الٹھا گالی نکالنا ہی ہوتا ہے میں تو ہر کسی کو کہتا ہو نشان سے کچھ نہیں ہوتا لیکن کوئی مانتا ہی نہیں
    کہتے ہی نہیں یہ نشان مسلمانوں کی فتح کی نشان ہے،

    بھائی ہمارے پاکستانیوں کا یہی کام ہے۔
    جمہوریت ہے نہ جمہوری کاموں میں بڑھ چڑ کر حصہ لیتے ہے۔۔
    آپ کی اور باقی دوستوں کی پوسٹس میں مجھے بہت پسند آ گئی ہے۔۔
    اللہ آپ کو اس کا اجر دے۔۔
     
  7. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    رائے کے اظہار کا شکریہ

    عکاشہ بھائی اور رفیق طاھر بھائی نے اس نشان کو بجا طور پرفری میسنری سمبل قرار دیا ہے ۔ ان کی رائے بہت سے لوگوں کو اس لیے سمجھ نہیں آرہی کیوں کہ وہ masonic symbolism سے واقف نہیں ۔ یہ کہنا غلط ہے کہ یہ نشان پہلی بار ایجاد یا اختراع کیا گیا ہے ۔ یہ ایک قدیم نشان ہے جو پہلے استعمال ہوتا ہے ۔
     
  8. dani

    dani نوآموز.

    شمولیت:
    ‏اکتوبر، 16, 2009
    پیغامات:
    4,329
    بھائن فراز جب یار لوگ رابعہ کا کالا پیلا نشان لگانے کے یہ مزاحیہ دلائل دیتے ہیں کہ
    رابعہ شہادت کا نشان ہے
    رابعہ خلافت کا نشان ہے
    تو ان کی جانبداری پر بھی لوگ ہنستے ہیں
    جماتیے اور اخوانیے اتنے زوروں سے دلائل دے کر لوگوں کو ہنسا رہے ہیں اور فیس بک پر ان کی بڑی واٹ لگ چکی ہے ۔ابھی بھی وہ خواب دیکھ رہے ہیں کہ اتنے لاکھ لوگوں نے رابعہ کا نشان لگا لیا ہے اس سے کیا ہوا ہے فلسطین آزاد ہو گیا ہے یا مصر اور ترکی میں خلافت آ گئی ہے ؟
     
  9. اسامہ طفیل

    اسامہ طفیل نوآموز

    شمولیت:
    ‏اگست 5, 2013
    پیغامات:
    198
    شکریہ !!!

    جمہوریت تو انسان کے قانون اور بے لگامی کا نام ہے مسلمان تو اللہ کی زمین پر اللہ کا قانون پر یقین رکھتے ہیں کس کو آج اچھی نظر سے نہیں دیکھا جاتا مغربی جمہوریت دیکھ لے اور اسلامی خلافت کا ایسے مزاق بنایا ان لوگوں نے آج مسلمان بھی جمہوریت جمہوریت کرتے نیہں تھکتے یہ صرف میرا ذاتئ خیال ہے آٹھ سال میں نے امریکا میں گزارے ہے اور خود قانون میرا پیشہ ہے صرف ایک بات دیکھی ہے قانون بنانے والے قانون صرف عام لوگوں کے لے بناتے ہے اپنے لے نہیں
     
  10. طارق راحیل

    طارق راحیل -: مشاق :-

    شمولیت:
    ‏اپریل 23, 2009
    پیغامات:
    351
    مصر کے دارالحکومت قاہرہ کے رابعہ العدویہ اسکوائر میں احتجاجی دھرنا دینے والے سابق صدر محمد مرسی کے ہزاروں حامیوں کے خلاف سکیورٹی فورسز کے خونریز کریک ڈاؤن کے خلاف ہاتھ کی چار انگلیوں کا نشان فتح کی ایک نئِی علامت بن کر ابھرا ہے اور یہ مصر کے علاوہ دنیا بھر میں بہت مقبول ہوا ہے۔

    سماجی روابط کی ویب سائٹس پر اس نئی علامت کی خوب تشہیر کی جا رہی ہے اور اس کے ساتھ مصر کی مسلح فورسز کی جانب سے پُر امن مظاہرین کے خلاف طاقت کے بے مہابا استعمال کی بھرپور مذمت کی جا رہی ہے۔

    دو انگشت کے روایتی امن یا فتح کے نشان کو اب گزری صدی کی یادگار سمجھا جا رہا ہے اور ہر طرف رابعہ العدویہ اسکوائرکی یاد میں چار انگلیوں کے نشان کا چرچا ہے۔ سماجی روابط کی ویب سائٹس پر ''چار انگشت کے سلیوٹ'' کو تیز زرد رنگ کے ساتھ بنایا گیا ہے۔

    عربی میں رابعہ چار کو کہتے ہیں اور ہاتھ کی چار انگلیوں کی علامت کو مظاہرین کے ساتھ اظہار یک جہتی کے طور پر استعمال کیا جارہا ہے۔ جب اس نشان کو بنایا جاتاہے تو اس میں ہاتھ کی چار انگلیوں کو بلند کیا جاتاہے، یہاں رابعۃ العدویہ کے میدان کی مناسبت سے رابعہ یعنی چار کے لفظ کو اجاگر کیا گیا ہے۔

    r4bia کا نشان دراصل مصر میں رابعۃ العدویہ کے میدان میں جاں بحق ہونے والے ہزاروں مسلم بھائیوں اور بہنوں سے اظہار یک جہتی کی علامت ہے اور یہ دہری کامیابی کا نشان بھی ہے، یعنی دنیا اور آخرت ميں کامیابی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں