مسافر کی نماز اگر اس نے مغرب کو عشاء کے ساته پڑهنا هے تو کیسے پڑهے؟

ام ثوبان نے 'آپ کے سوال / ہمارے جواب' میں ‏جنوری 21, 2014 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. ام ثوبان

    ام ثوبان رحمہا اللہ

    شمولیت:
    ‏فروری 14, 2012
    پیغامات:
    6,690
    السلام عليكم ورحمة الله وبركاته
    کوئ مسافر سفر میں هے اور وہ جب رکا تو عشاء کی جماعت هونے لگی تهی اس کی مغرب اور عشاء پڑهنے والی رهتی تهی اب وہ پہلے جماعت کے ساته عشاء پڑهے گا پهر مغرب پڑهے گا یا عشاء کی جماعت کے ساته مغرب پڑهے گا اور امام سے پہلے تین رکعت پڑه کر سلام کیسے پهیر دے براے مہربانی مغرب اور عشاء کا طریقہ بتا دیں کہ مسا فر ایسی صورتحال میں کیسے نماز پڑهے ؟؟؟؟
    اور جہاں جا کر مسافر رکتا هے کتنے دن تک قصر نماز پڑه سکتا هے کہیں 19 دن کہیں 14 دن کہیں تین دن لکها هے
    ایک شہر میں اس کی پراپرٹی تو هے کهی اس میں رهتا نہیں اس شہر میں دو تین دن کے بعد باقی کی چهٹی جو 20 یا 25 دن هے ملتے ملاتے گزر جاتی هے کیا جہاں اس کی پراپرٹی هے وهاں بے شک ایک دن رهے پوری نماز پڑهے گا
    اور شادی کے بعد لڑکی اپنے ماں باپ سے ملنے ایک دو دن کے لیئے آے تو پوری نماز پڑهے گی ؟؟؟؟
     
  2. رفیق طاھر

    رفیق طاھر علمی نگران

    رکن انتظامیہ

    ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏جولائی 20, 2008
    پیغامات:
    7,938
    ۱۔ پہلے مغرب کی نماز ادا کرے پھر عشاء پڑھے ۔
    امام چار رکعتیں پڑھ کر سلام پھیر دے گا تو یہ کھڑا ہو کر مزید ایک رکعت ادا کرے ۔ اس طرح اسکی تین رکعتیں مغرب کے فرض اور دو نفل ہو جائیں گے ۔
    ۲۔ کسی جگہ چار دن یا کم قیام کرنا ہو تو نماز قصر کرے ‘ اس سے زیادہ رکنے کا ارادہ ہو تو مکمل ادا کرے ۔ اور اگر تردد ہو کہ آج کل میں واپسی ہو جائے گی لیکن دن زیادہ لگ جائیں تو انیس دن تک قصر کرے اسکے بعد بھی تردد قائم رہے تو مکمل ادا کرے ۔
    ۳۔ پراپرٹی والے شہر میں نماز قصر کرے گا اگر وہ وہاں مسافر ہے ۔
    ۴۔ قصر نماز ادا کرے گی ۔
     
  3. ام ثوبان

    ام ثوبان رحمہا اللہ

    شمولیت:
    ‏فروری 14, 2012
    پیغامات:
    6,690
    براے مہربانی صرف اس بات کی اگر کہیں دلیل هے تو بتا دیں کہ امام اگر چار رکعت کے بعد سلام پهیر دے تو مسافر ایک اور رکعت پڑه کر پانچ رکعت پڑه لے یہ بات کوی مان نہیں رها وضاحت فرما دیں تو اللہ آپ کو بہترین جزا دے آمین

    جزاک اللہ خیرا
     
  4. رفیق طاھر

    رفیق طاھر علمی نگران

    رکن انتظامیہ

    ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏جولائی 20, 2008
    پیغامات:
    7,938
    مقیم امام کی اقتداء میں مسافر مقتدی چار رکعت پڑھتا ہے ۔ صرف امام کی اقتداء کی وجہ سے ‘ جبکہ اس پر تو صرف دو رکعتیں ہی فرض ہیں ۔
    تو جب امام کی اقتداء کی وجہ سے دو رکعتیں زائد پڑھنا جائز ودرست ہے تو اسی امام کی اقتداء کی بناء پر ایک رکعت زائد پڑھنا بطریق اولى درست ہوا ۔
    یعنی جو دلیل مسافر مقتدی کے لیے امام کی پیچھے چار کعتیں پڑھنے کی ہے ‘ وہی نماز عشاء کی جماعت کروانے والے امام کے پیچھے نماز مغرب پڑھنے والے مقتدی کے لیے پانچ رکعتیں پڑھنے پر بھی بطریق اولى دلالت کرتی ہے ۔
     
  5. ام ثوبان

    ام ثوبان رحمہا اللہ

    شمولیت:
    ‏فروری 14, 2012
    پیغامات:
    6,690
    جزاک اللہ خیرا
     
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں