غزل

حافظ عبد الکریم نے 'شعری مجلس' میں ‏مارچ 24, 2017 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. حافظ عبد الکریم

    حافظ عبد الکریم محسن

    شمولیت:
    ‏ستمبر 12, 2016
    پیغامات:
    550
    شاعر:اظہر پاشاہ اظہر​
    کہا اک غزل میں نے جب مجھے شاعر سمجھ بیٹھے
    مگر انداز جب دیکھا تو اک ساحر سمجھ بیٹھے

    خدا مختار کُل ہے چاہ لے جو کر کے رہتا ہے
    وہ ہیں نادان جو غیروں کو بھی قادر سمجھ بیٹھے

    مرے رب کا ہے یہ انصاف فاجر کو سزا دینا
    مگر کچھ نا سمجھ رب کو مرے جابر سمجھ بیٹھے

    جو خدمت پر خدا کے دین کی اجرت کے طالب ہیں
    انہیں ہم دیکھ کر اس دور کا تاجر سمجھ بیٹھے

    غلط چلنے پہ یاروں کی جو میں نے رہنمائی کی
    نصیحت سن کے وہ سارے مجھے زاجر سمجھ بیٹھے

    مصیبت آئی جب کوی تو پُر نم ہوگئیں آنکھیں
    مگر اظہرؔ کیوں اس کو یار بس ظاہر سمجھ بیٹھے​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں