’لگتا ہے آپ نے پاکستان میں پہلی دفعہ کام کیا ہے‘

بابر تنویر نے 'مضامين ، كالم ، تجزئیے' میں ‏جون 2, 2017 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. بابر تنویر

    بابر تنویر -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏دسمبر 20, 2010
    پیغامات:
    7,318
    کریم سروس کے مینجنگ ڈائریکٹر جنید اقبال نے کسی کا نام لیے بغیر الزام لگایا کہ انسپکٹر جنرل آف پولیس (آئی جی پی) نے اپنے بیٹے کی نوکری کیلئے انھیں ’مدد فراہم‘ کرنے پر دباؤ ڈالا.

    جنید اقبال نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک پر ایک اسٹیٹس میں آئی جی پولیس کی جانب سے ان کے بیٹے کی نوکری کیلئے کمپنی پر دباؤ ڈالنے کے حوالے سے روداد لکھی ہے۔

    ان کا کہنا تھا کہ ’آئی جی پولیس نے ان کو صبح فون کیا اور ان کے بیٹے کی نوکری کیلئے حمایت کرنے کو کہا، میں نے انھیں کہا کہ یہ چیز اس کا کیس خراب کردے گی اور اگر آپ کا بیٹا معیار کے مطابق تعلیم یافتہ ہے تو اس کے ساتھ انصاف ہوگا، جس پر آئی جی نے کہا کہ ’لگتا ہے کہ آپ نے پاکستان میں پہلی دفعہ کام کیا ہے‘‘۔

    جنید اقبال کا کہنا تھا کہ ’تاہم انھوں نے تحمل سے میری بات سنی اور سمجھی، میں نے انھیں اپنے ایک افسر کا ای میل ایڈریس دیا اور انھیں نوکری کے حوالے سے معلومات کا لنک بھی فراہم کیا‘۔

    کریم کے مینجنگ ڈائریکٹر کا کہنا تھا کہ ’’اس کے بعد ان کے بیٹے نے انھیں ایک ای میل بھیجی، جس میں میری اور اپنے والد کی فون پر ہونے والی بات چیت کا حوالا دیا گیا تھا، اس کے ساتھ ہی ای میل میں اس کے نام کے بعد ’ایکس وائے زیڈ آئی جی پی کا بیٹا‘ لکھا ہوا تھا‘‘۔

    اس معاملے کے حوالے سے جنید اقبال نے اپنے اسٹیٹس میں مزید لکھا ہے کہ ’افسوس ناک بات یہ ہے کہ یہ شخص پاکستان کی دو ای-کامرس کمپنیوں کے بورڈ آف ڈائریکٹریٹ کی سربراہی کررہا ہے، ہمیں ان کی پروفائل مزید ایک پروڈکٹ کیلئے درکار تھی، میں نے اسے جواب میں تحریر کیا کہ وہ واضح کریں کہ وہ آئی جی کے بیٹے کی حیثیت میں نوکری کیلئے درخواست دے رہے ہیں یا سابق ایکس وائے زیڈ کے سربراہ کے طور پر یا حال ہی میں ایم بی اے مکمل کرنے والے کی حیثیت سے نوکری کی درخواست دے رہے ہیں‘۔

    اپنے اسٹیٹس کے آخر میں جنید اقبال نے اپنے فیس بک دوستوں سے سوال کیا کہ ’کیوں! کیوں لوگ ایسا کرتے ہیں؟ وہ کیوں نہیں یقین رکھتے کہ منصفانہ کھیل بھی ہے‘۔

    Junaid Iqbal
    on Tuesday
    An IG Police called me this morning lending his support to his son's application for a job. I politely said to him that this will ruin his case and if his son is qualified, he will have a fair shot. He said "lagta hai aap nay Pakistan mein pehli dafa kaam kia hai." To which I explained that this is not correct. Anyways, he was kind enough, he listened, he understood, i gave him the email address of our recruiter and also the Jobvite link.

    Then his son sends us an email, copying me and telling my colleague that "in reference to Mr. Junaid's discussion with my father so and so". And then under his name, signs off the email as "S/O IGP XYZ."

    Whhhaatttt the hell???

    NOW, the saddest thing is that this guy has headed BD for two e-commerce companies in Pakistan. We would have most likely taken him anyways. We need that profile for one of our new products.

    I wrote back to him asking him to clarify if he is applying as son of IG or as former BD Head of XYZ and a fresh MBA.

    Why? Why do people do this? Who can't they believe that fair play does exist!

    While I have your attention, we have lots of open positions. Please apply:

    بشکریہ ڈان نیوز
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
    • معلوماتی معلوماتی x 1
  2. انا

    انا -: ممتاز :-

    شمولیت:
    ‏اگست 4, 2014
    پیغامات:
    1,400
    کچھ لوگ واقعی بہت عجیب ہوتے ہیں۔ جاب تلاش کرنے والوں کی طرف سے میں نے کافی احمقانہ قسم کی غلطیاں ہوتے دیکھی ہیں ۔ سی وی میں، جاب اپلائی کرتے ہوئے یا انٹرویو کے دوران ، لیکن اتنی صاف گفتگو کے بعد پھر اسی ڈھٹائی سے ریفرنس استعمال کرنا ، بہت عجیب ہے۔

    کچھ کمپنیز ریفرنس مانگتی ہیں ، اس وقت ضروری ہوتا ہے کہ آپ ریفرنس دیں ۔ لیکن ہر کمپنی کا اپنا ایک مزاج ہوتا ہے۔ اور اپلائی کرنے سے پہلے اس کلچر کو سمجھنا بہت ضروری ہے۔ نہیں تو شروعات میں ہی آپ کی سی وی ، آپ کی تمام تر کوالیفیکیشن کے باوجود ردّی کی ٹوکری میں ہی جاتی ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
    • حوصلہ افزا حوصلہ افزا x 1
  3. کنعان

    کنعان محسن

    شمولیت:
    ‏مئی 18, 2009
    پیغامات:
    2,850
    السلام علیکم

    سی وی میں ریفری کا کوئی آپسن نہیں ہاں نوٹ میں صرف اتنا لکھا جا سکتا ہے کہ کمپنی ڈیمانڈ پر ریفری ڈیٹیل پیش کی دی جائے گی۔

    کسی بھی جاب پر چاہے پرنٹڈ اپلیکیشن ہو یا آنلائن، ہمارے یہاں فارم کے آخر میں دو ریفری پر ایک کالم بنا ہوتا ہے، ایک ریفری وہ جو پہلے والی جاب اگر چھوڑی ہے یا وہیں کام کر رہے ہیں اسی ادارہ میں جاب کر رہا ہو وہ اور دوسرا ریفری آپ اپنی پسند پر کسی کی بھی ڈیٹیل دے سکتے ہیں، ان ریفریز کا سفارش سے کوئی تعلق نہیں ہوتا بلکہ جاب آفر سے پہلے کمپنی اگر چاہے تو ان سے آپ پر معلومات حاصل کر سکتی ہے اگر جواب منفی میں ہو تو جاب نہیں ملتی اور اگر مثبت ہو تو آفر لیٹر جاری کر دیا جاتا ہے۔

    والسلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  4. ابوعکاشہ

    ابوعکاشہ منتظم

    رکن انتظامیہ

    شمولیت:
    ‏اگست 2, 2007
    پیغامات:
    15,921
    اس شخص نے اچھا کیا کہ سوشل میڈیا پر لکھ دیا. ایسے لوگوں کا یہی علاج ہے. اگر چہ انہیں کوئی فرق نہیں پڑتا. کم از کم اتنا ہوسکتا ہے کہ لوگ باخبر ہو جائیں. ابھی چند ماہ قبل سفر کے دروان کراچی میں ایک ریٹائرڈ آفیسر سے جن کا تعلق خفیہ ادارے کی اسپیشل برانچ سے رہا ہے. ایک دعوت پر ملاقات ہوئی. بتا رہے تھے کہ انہیں اپنا حق لینے کے لئے بھی رشوت دینی پڑ رہی ہے. اور وہ تین سال میں کئی بار افسران سے باضابطہ شکایت کر چکے کہ انہیں رقم دلائی جائے. ابھی تک رقم نہیں ملی. ان کے ہم عصر افسران ڈیفنس جیسے علاقوں میں مزے کی زندگی گزار رہے ہیں.شریف آدمی کا یہی مسئلہ ہے کی وہ اپنا حق بھی نہیں لے سکتا. شریفانہ، ایمانداری کے ساتھ زندگی گزارنا تو اور بھی مشکل ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں