اے ٹی ایم سے جعلی بینک نوٹ نکل آنے پر کیا کیا جائے؟

عائشہ نے 'اركان مجلس كے مضامين' میں ‏ستمبر 16, 2017 کو نیا موضوع شروع کیا

  1. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    ہمارے ملک کے سادہ لوح لوگ نئی ٹکنالوجی سے ڈرتے ہیں تو غلط نہیں ڈرتے۔ جو کام دنیا میں لوگوں کی سہولت کے لیے کیے جاتے ہیں کچھ بددیانت لوگوں کی وجہ سے وہ دھوکا دینے کے نئے طریقوں میں بدل جاتے ہیں۔ ایک مسئلہ جو کئی لوگوں کو پیش آ چکا ہے وہ ہے اے ٹی ایم سے جعلی بینک نوٹ ملنا۔
    اولا تو وہ بینک انتہائی بے ہودہ خدمات دے رہا ہے جس کی اے ٹی ایم مشینیں نقلی نوٹ پہچان نہیں رہیں۔ جدید اے ٹی ایم مشین نقلی، پھٹے پرانے نوٹ پہچان کر خود ہی رد کر دیتی ہے۔ پھر بھی یہ مسئلہ لوگوں کے ساتھ ہو رہا ہے تو دال میں بہت کالا ہے۔
    ثانیا: جس طرح ہماری قوم کو آئل ٹینکر حادثے کے بعد پتہ چلا کہ غیر معیاری آئل ٹینکر سڑکوں پر ہیں، اسی طرح مجھے ابھی علم ہوا کہ سٹیٹ بینک آف پاکستان بھی اعتراف فرما چکا ہے کہ اے ٹی ایم سے جعلی نوٹ ملتے ہیں۔ سوال یہ ہے کہ یہ ادارہ اعترافات کے علاوہ کس مرض کی دوا ہے؟ اس کا جوابا فرمانا ہے کہ اس مسئلے کا حل نکالنا اس کا نہیں قانون نافذ کرنے والے اداروں کا کام ہے۔حوالہ یہ ہمارے اس قومی رویے کا ایک اور ثبوت ہے جس میں ہم اپنے ڈیسک پر پڑے ہر کام کو کسی دوسرے کے ذمے لگا دیتے ہیں۔
    بہرحال اس مسئلے کے کچھ حل پیش خدمت ہیں، ارکان مجلس سے درخواست ہے کہ اپنے علم اور تجربات کی روشنی میں مزید معلومات دیں تا کہ خلق خدا کا بھلا ہو۔
    1- اے ٹی ایم سے نوٹ نکلواتے وقت انہیں اچھی طرح دیکھ لیں۔ ظاہر ہے ہمیشہ ایسا کہاں ممکن ہے خاص طور پر جب آپ باہر کھڑے دوسرے انسانوں کی ہمدردی میں جلدی باہر آنا چاہتے ہوں۔ لیکن اپنے ہم درد دل کونظر انداز کر کے کچھ وقت اپنے لیے نکالیں اور نوٹس پر غور کر لیں۔ اگر کسی نوٹ پر شک ہو تو نوٹ کو اے ٹی ایم کے نگران کیمرے کے سامنے کر کے ریکارڈ کروا دیں۔ ( یہ تبھی کار گر ہے جب کیمرہ بے کار نہ ہو۔) یہ وڈیو بعد میں آپ کے کام آ سکتی ہے۔ ( اگر بینک آپ کی بات سننے کو تیار ہو۔)
    2- باہر کھڑے گارڈ کو خبر کر دیں۔وہ کچھ کر نہیں سکے گا لیکن اے ٹی ایم سے باہر نکلنے سے پہلے ہی شکایت کر دینا بہتر ہے ۔کم از کم اس کو دن، وقت وغیرہ یاد رہے گا۔
    3- ٹرانزیکشن کی رسید سنبھال لیں۔اگر آپ کو ای میل پر ٹرانزیکشن الرٹس ملتے ہیں تو وہ بھی ڈیلیٹ نہ کیا کریں۔ (ہنسی تو آتی ہے کہ آخر کتنے دن سنبھالیں لیکن جب دھوکے بازوں کے جنگل میں رہنا ہو تو کھال موٹی کرنی پڑتی ہے اور ایسی خراب خدمات والے بینکس سے بھی جڑے رہنا پڑتا ہے۔)
    4- بینک کی ہیلپ لائن پر شکایت کریں، اور ان کی بتائی ہدایات پر عمل کریں۔
    5-اے ٹی ایم مشین، برانچ کے ساتھ ہے تو برانچ مینیجر سے رابطہ کریں، ورنہ جس برانچ میں آپ کا اکاؤنٹ ہے اس کے برانچ مینیجر کے پاس شکایت کریں۔ مینیجر اس نوٹ کے ساتھ نکالے گئے دوسرے نوٹوں کے سیریل نمبر سے وہ آپ کی شکایت کی تحقیق کر سکے گا۔ (یہ تبھی ہو گا جب اس میں درد دل ہو اور وہ خلق خدا سے بے زار نہ ہو۔اور اسی صورت میں جب ساتھ کے سارے نوٹ خرچ نہ ہو چکے ہوں۔)
    یہ نکات ان کے لیے تھے جنہیں فورا احساس ہو جائے کہ نقلی نوٹ وصول کر لیے ہیں۔ جن افراد کو رقم نکالنے کے کئی دن بعد معلوم ہو کہ ان کے نوٹ نقلی ہیں وہ اپنے بینک کے ٹرانزیکشن ریکارڈ کے ذریعے معلوم کر سکتے ہیں کہ کس دن پیسے نکالے گئے، اور بینک نوٹس کا سیریل نمبر کیا تھا۔ یہ تب ممکن ہے جب آپ مضبوط شخصیت کے مالک ہوں اور کام کروا کر ہی دم لیتے ہوں۔
    اس سب کے بعد بھی یاد رکھیےعموما بینک ایسی تحقیق میں مدد نہیں کرتے۔ نہ ہی وہ آپ کے نقلی نوٹ کے بدلے کوئی اصلی نوٹ دیتے ہیں۔
    انتہائی افسوس کی بات یہ ہے کہ اے ٹی ایم کارڈز کے ساتھ آپ کو جو ہدایات ملتی ہیں ان میں اس صورت حال میں کرنے کے قابل کوئی ہدایات نہیں ہوتیں۔ نہ ہی پاکستانی بینکوں کی ویب سائٹ پر آپ کو ایسی کوئی مدد ملے گی کہ ایسی صورت حال میں کیا کرنا ہے۔ یہ ہمارے ملک میں صارفین کے حقوق کی انتہائی خراب صورت حال کا نتیجہ ہے۔ ہم سب کو اس طرح کے ظلم کے خلاف آواز اٹھانی چاہیے اور قوانین بنوانے چاہییں جس میں صارف کو پہلے ہی ایسی صورت حال کے متعلق تعلیم دینے کا مطالبہ کیا جائے، اور ایسی صورت میں فوری مدد بھی دی جائے۔
    آپ کی ماہرانہ آرا کا انتظار رہے گا، اللہ کرے کہ اس مسئلے کاکوئی اچھا حل سامنے آ سکے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 3
    • متفق متفق x 1
  2. حسیب رزاق

    حسیب رزاق -: معاون :-

    شمولیت:
    ‏فروری 8, 2013
    پیغامات:
    103
    ہمارے یہاں پاکستان میں عموما اے ٹی ایم میں رکھے گئے نوٹوں کا سیریل نمبر نوٹ نہیں کیا جاتا اس لیے اس کا کوئی فائدہ نہیں ہونا
     
    • معلوماتی معلوماتی x 2
  3. حسیب رزاق

    حسیب رزاق -: معاون :-

    شمولیت:
    ‏فروری 8, 2013
    پیغامات:
    103
  4. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    مجھے معلوم ہوا ہے کہ ایسی شکایت برانچ مینیجر کے میز پر حل ہو جانی چاہیے۔ اگر کہیں ایسا نہ ہو تو سٹیٹ بینک کے کنزیومر پروٹیکشن ڈیپارٹمنٹ سے شکایت کی جا سکتی ہے۔ اس کے علاوہ بینکنگ محتسب پاکستان کو بھی شکایت کی جا سکتی ہے۔ ان دونوں کے ویب روابط یہ ہیں:
    http://www.sbp.org.pk/cpd/cpd-help.asp
    ایس بی پی کا آن لائن کمپلینٹ فارم
    http://www.sbp.org.pk/cpd/cpd-complaint-form.asp
    http://www.bankingmohtasib.gov.pk/complaints.php
    اے ٹی ایم والے معاملے میں مسئلہ یہ ہے کہ کنزیومر کے پاس اس بات کا کوئی ثبوت نہیں ہوتا کہ فیک نوٹ اسے بینک کی اے ٹی ایم سے ہی ملا ہے۔ رسید پر صرف کل رقم درج ہوتی ہے۔ افسوس بینکرز کو اپنے نظام کا یہ خلا معلوم ہے مگر وہ اس کو دور نہیں کر رہے۔ سارا زور اس نکتے پر دیتے ہیں کہ جدید اے ٹی ایم مشین فیک نوٹ نہیں جاری کرتی۔ یہ اب کنزیومرز کی اپنی ہمت ہے کہ وہ کیسے اپنا حق منواتے ہیں اور کس ادارے سے جا کر منواتے ہیں۔
     
  5. حسیب رزاق

    حسیب رزاق -: معاون :-

    شمولیت:
    ‏فروری 8, 2013
    پیغامات:
    103
    سب سے بڑا مسئلہ یہی ہے
    اور اس سے بھی بڑا مسئلہ یہ ہے کہ بنک اس کی تمام ذمہ داری اپنے ملازمین پہ ڈال دیتا ہے۔ اگر کسی کشئیر کے پاس غلطی سے جعلی نوٹ آ جائے تو وہ کیشئیر کو اپنی جیب سے دینا پڑتا ہے
    مین برانچ سے آنے والے نوٹوں میں بھی اگر کیشئر نوٹوں کی گڈی کھولنے سے پہلے اگر جعلی نوٹ پکڑ لے تو صحیح. ورنہ وہ بھی کیشئر کی ذمہ داری بن جاتی ہے. ایسی صورتحال میں کیشئر ان نوٹوں کو نکالنے کے چکر میں ہوتا ہے
    اے ٹی ایم میں بھی یہی صورتحال ہوتی ہے

    یہی وجہ ہے کہ بنک ملازمین معلوم ہونے کے باوجود اپنی غلطی ماننے سے انکاری ہوتے ہیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  6. شرجیل احمد

    شرجیل احمد رکن اردو مجلس

    شمولیت:
    ‏جون 19, 2017
    پیغامات:
    56
    آہ ، ہم بھی متاثرین میں شامل ہیں۔ :(
    اس بار چھوٹی عید پر یہ ہاتھ ہو چکا ہے۔ عید کی چھٹیوں کے بعد بینک مینیجر کو مل کر ساری صورتحال سے آگاہ کیا، جعلی نوٹ بھی پیش کیے لیکن تاحال کوئی شنوائی نہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
  7. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    میرا مسئلہ برانچ مینیجر نے حل کر دیا تھا۔ اگر چہ ان کے ماتحت سٹاف نے بہت آنا کانی کی لیکن میں نے اصرار کیا کہ برانچ مینیجر سے ہی بات کرنی ہے۔ تو بالآخر ان کے دربار عالیہ تک رسائی ملی اور انہوں بات سن کر فورا نوٹ بدل دیا۔
    ماتحت حضرات میں سے ایک مصر تھے کہ نوٹ اصلی ہے۔ میں نے عرض کیا درست، اب یہ اصلی آپ رکھ لیجیے مجھے اس جیسا دوسرا اصلی عنایت فرمائیں۔ اس پر تیزی سے بولے کہ اچھا ہم مشین سے چیک کر لیتے ہیں۔ مجھے خیال آیا کہ واہ جب تک میرا تھا اصلی تھا، اب آپ کو دیا تو مشین یاد آئی۔ تعلیم نے یہ سکھایا کہ اپنی ہی قوم کو دھوکا دو۔ کاش ایسے لوگوں نے ڈگری کے ساتھ انسانیت کی خدمت بھی سیکھی ہوتی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
    • متفق متفق x 1
  8. عائشہ

    عائشہ ركن مجلس علماء

    شمولیت:
    ‏مارچ 30, 2009
    پیغامات:
    24,485
    میرے ساتھ بھی عید الاضحی کے دنوں میں ہوا تھا۔ بینکر مافیا نے عیدی لینے کانیا طریقہ سوچا ہے شاید۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ x 1
Loading...

اردو مجلس کو دوسروں تک پہنچائیں